18 مئی 2020 سے عوامی  گرجا گھر اور دیگر عقیدوں  کے حامی گروپ دوبارہ گرجا گھروں، یہودی عبادت گاہوں، مساجد کو عوام کے لئے کھول سکتے ہیں۔

18 مئی 2020 سے عوامی  گرجا گھر اور دیگر عقیدوں  کے حامی گروپ دوبارہ گرجا گھروں، یہودی عبادت گاہوں، مساجد کو عوام کے لئے کھول سکتے ہیں۔

18 مئی 2020 سے عوامی  گرجا گھر اور دیگر عقیدوں  کے حامی گروپ دوبارہ گرجا گھروں، یہودی عبادت گاہوں، مساجد کو عوام کے لئے کھول سکتے ہیں۔

عوامی گرجا گھروں اور دیگر عقائد کی عبادت گاہوں کو ذمہ دارانہ طرح سے دوبارہ کھولنے کے لئے اہم رہنما اصول یہ ہیں۔ یہ رہنما خطوط کلیسیا کی وزارت کی ویب سائٹ پر مل سکتے ہیں (ڈینش میں یہاں)

اگر آپ کو شک و شبہ ہے کہ رہنما اصولوں کا آپ  کے اوپر اور آپ کے عقائد پر عمل کرنے کے مواقع پر کیسے اطلاق ہوتا ہے تو ہماری ہاٹ لائن پر فون کریں۔

اجتماع کی  ممانعت کا اطلاق عوامی گرجا گھروں اور دیگر عقائد کی زیرِاستعمال عبادت گاہوں  پر نہیں ہوتا ہے۔ جنازوں اور تجہیز و تکفین کے لئے کھلی جگہوں پر اجتماع کی  پابندی کا بھی اطلاق نہیں ہوتا ہے۔

یہ درجِ ذیل کی اجازت دیتا ہے:

  • نماز، گرجا گھروں میں عبادت، نماز جمعہ، صحیفوں کے لئے اجتماع، انفرادی غور وفکر وغیرہ۔
  • بپتسمہ/ توثیق/ کیتھولک توٖثیق/ یہودی لڑکوں اور لڑکیوں کی بلوغت کی توثیق (bar og bat mitzvah)، نکاح، جنازہ تجہیز و تکفین اور اس قسم کی مذہبی اقدامات۔
  • عوامی گرجا گھروں، یہودی عبادت گاہوں، مساجد اور دیگرعقیدوں والی جماعتوں کی عبادت گاہوں اور احاطوں میں دیگر مذہبی سرگرمیاں۔

کھلی جگہوں میں سرگرمیوں پر اجتماع کی پابندی بدستور برقرار رہے گی، ماسوا جنازہ اور تجہیز وتکفین کے۔

اندرونی مقامات جہاں سب لوگوں کو رسائی حاصل ہو وہاں منعقدہ سرگرمیوں کے لئے ایریا کے ضمن میں حکام کے تقاضوں پر عمل درآمد کیا جائے۔

 

(1 ایک ملاقاتی کے لئے فی کس ایریا 4 مربع میٹر فرش ہے۔ اگر فرش 4 مربع میٹر سے کم ہو توصرف ایک ملاقاتی کی اجازت ہے۔

(2 کمروں یا مقامات کو یوں بندبست کیا جائے کہ لوگوں کے لئے فاصلہ رکھنا ممکن ہو۔

(3 کمروں/مقامات کے اندر یا ان کےساتھ یہ بندوبست کیا جائے۔

جن لوگوں کو کورونا وائرس / COVID-19 کی بیماری کی علامات لا حق ہیں انہیں صحت کے بورڈ کے اطلاعاتی مواد  کے مطابق خود کو گھر میں الگ تھلگ رکھنا چاہئے، اور پبلک جگہوں میں اچھا حفظان صحت اور مناسب طرز عمل اختیار کرنا چاہیئے۔

(4 ملازمین، رضاکاروں اور ملاقاتیوں کو اچھے حفظان صحت اور مناسب طرز عمل کے متعلق صحت کے بورڈ کی سفارشات پر عمل کرنا چاہیئے۔

5) جہاں تک ممکن ہوملاقاتیوں کے لئے  پانی اور مائع صابن یا الکحل پر مبنی (70-85٪) ہاتھ  کی صفائی والا مواد دستیاب ہونا چاہئے۔

6) اگرکھانا برتانے والے افراد اشیاء خورد و نوش کو اپنے ہاتھوں سے چھوتے ہوں توملازمین اور کمروں/مقامات سے وابستہ دوسرے افراد کو کھانا دیتے وقت دستانے پہننے چاہئیں۔

اس کے علاوہ انفیکشن کے پھیلاؤ کی روک تھام کے بارے میں صحت کے حکام کی عمومی سفارشات پر عمل کیا جانا چاہئے۔

باہمی فاصلہ برقرار رکھنا یاد رہے۔ افراد کے درمیان کم از کم 1 میٹر کا فاصلہ ہونا چاہئے۔ ایسی صورتحال میں جہاں انفیکشن کا خطرہ بڑھ سکتا ہو، جیسے۔ گرجا گھر میں جہاں گانا ہوتا ہے، وہاں کم سے کم 2 میٹر کی دوری ہونی چاہئے۔

داخل ہوتے وقت اور جاتے ہوئے فاصلہ برقرار رکھنا یاد رہے!

بڑھے ہوئے خطرہ والے زائرین کوغور کرنا چاہئے آیا وہ گرجا گھر کی سرگرمیوں یا دوسرے عقائد کی عبادت گاہوں میں  جسمانی طور پر حصہ لے سکتے ہیں، یا انہیں دوسرے طریقوں سے بھی شرکت کی کوشش کرنی چاہئے۔ جیسے کہ آن لائن یا کسی دوسری صورت میں۔

عوامی گرجا گھروں اور دیگر مذہبی عقائد کی عبادت گاہوں کوذمہ دارانہ طور پر دوبارہ کھولنے کے لئے رہنما خطوط کو جاری و ساری صورتِ حال کے پیشِ نظر تواتر سے مطابقت میں ڈھالا جائے۔